پسنی سے تربت جانے والے 5 لاپتہ افراد کی لاشیں برآمد

پسنی سے تربت تک کا راستہ

پسنی سے تربت تک کا راستہ

تحصیل پسنی کے گاؤں کپر سے زیارت کی غرض سے پیدل تربت جانے والے 5 افراد کی لاشیں ملی ہیں۔ یہ افراد 6 روز قبل زیارت کے غرض سے پیدل ہی تربت تک کے سفر کے لئے نکلے تھے۔ سفر میں عموما 3 دن لگتے ہیں مگر 3, 4 دن گزرنے کے باوجود جب یہ افراد تربت نہ پہنچے تو ان کو لاپتہ قرار دے کر ان کی تلاش شروع کر دی گئی۔

غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق ان افراد کی موت راستے میں شدید گرمی اور پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہوئی۔ ہلاک ہونے والوں میں ابراہیم اور ان کا بیٹا صغیر، دو بھائی جن کا نام حمید اور دلی ہے، اور نثار احمد نامی شخص شامل ہیں۔ ہلاک ہونے والے افراد کا تعلق ذکری فرقے سے ہے جو کوہِ مراد کے مقام کی ریارت کرنے جا رہے تھے۔ لاشوں کے ملنے کے بعد مقامی قبرستان میں دفنانے کا انتظام کیا جا رہا ہے۔

ہلاک ہونے والے افراد کے تدفین کا منظر

ہلاک ہونے والے افراد کے تدفین کا منظر

میں سٹریم میڈیا کے چینل جاگ ٹی وی کے مطابق ہلاک ہونے والے افراد کو چند دن پہلے اغوا کیا گیا تھا۔ مگر ان اطلاعات کی تاحال تصدیق نہیں ہوئی۔ پسنی میں موجود پاک وائسز کے رپورٹر کے مطابق موت کی وجہ گرمی کی شدت ہی بتائی جا رہی ہے اور ان افراد کے اغوا ہونے کا کوئی ذکر نہیں۔